LOADING

Type to search

اسلام آباد(بگ ڈیجٹ) اسلام آباد ہائیکورٹ نے لاپتا شہری کی بازیابی کے لیے حساس اداروں سے رپورٹس طلب کرلیں

Share this to the Social Media

 اسلام آباد ہائیکورٹ نے حساس ایجنسیوں کو لاپتا شہری سے متعلق رپورٹ جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) کے جسٹس محسن اختر کیانی نے شہری کے لاپتا ہونے سے متعلق درخواست پر راولپنڈی، اسلام آباد اور آزاد جموں و کشمیر میں تعینات انٹر سروسز انٹیلی جنس اور ملٹری انٹیلی جنس کے سیکٹر کمانڈرز سے رپورٹس طلب کر لی ہیں۔خلیقہ خورشید کی جانب سے دائر درخواست کے مطابق وادی نیلم کے رہائشی مسٹر خورشید 7 جون کو لاپتا ہوگئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ خورشید راولپنڈی میں تھے اور اسلام آباد کے G-13 سیکٹر گئے تھے، لیکن گھر واپس نہیں آئے۔

درخواست گزار کے وکیل نے آئی ایچ سی کو بتایا کہ خورشید کے بھائی نے مقامی پولیس میں شکایت درج کرائی ہے لیکن ان کا سراغ نہیں لگایا جا سکا۔

ہفتے کے روز اپنے حکم میں، عدالت نے نوٹ کیا کہ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے ایف آئی اے اور سی ٹی ڈی کی جانب سے 14 جون کی ہدایت کی تعمیل میں حکومت کو تحریری رپورٹس جمع کرائیں۔ ایف آئی اے اور سی ٹی ڈی دونوں رپورٹس نے خورشید کی تحویل سے انکار کیا ہے۔

وزارت دفاع کے لا آفیسر نے جسٹس کیانی سے انٹیلی جنس ایجنسیوں کی جانب سے رپورٹس جمع کرانے کے لیے مزید وقت مانگا ہے۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے حکم دیا کہ اسلام آباد، راولپنڈی اور آزاد جموں و کشمیر کے آئی ایس آئی اور ایم آئی کے سیکٹر کمانڈرز کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ اپنی رپورٹس اپنے دستخطوں کے ساتھ تحریری طور پر پیش کریں۔ اگلی سماعت 24 جون کو مقرر ہے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *